یہ جگہ انسانوں کے لیے نہیں، محض پاگل پن ہے

‘یہ جگہ انسانوں کے لیے نہیں ہے۔ یہ محض پاگل پن ہے۔’
یہ الفاظ پاکستانی فوج میں تقریباً دو دہائیوں سے کام کرنے والے اس ڈاکٹر کے ہیں جس نے سیاچن کے محاذ پر 19 ہزار فٹ کی بلندی پر آٹھ ماہ گزارے اور ان کے مطابق یہ ان کی زندگی کے سب سے مشکل اور ناقابل فراموش ترین دن تھے۔
* لاحاصل جنگ اور جنگلی گلابوں کی سرزمین
* سیاچن: پاکستان اور انڈیا کے لیے انا کی دلدل
اس وقت لیفٹیننٹ کرنل کے عہدے پر فائز اس ڈاکٹر نے سیاچن پر تقریباً 12 سال قبل وقت گزارا تھا اور انھیں اب بھی وہاں ِبتایا ہوا ہر پل یاد ہے۔
اپنا نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر انھوں نے بی بی سی کو بتایا کہ ‘سیاچن شاید دنیا کی سب سے مایوس کن جگہ ہے۔ آپ کو اپنے چاروں جانب صرف برف کی چادر نظر آتی ہے جہاں دور دور تک کسی قسم کی کوئی زندگی کے آثار نظر نہیں آتے۔’
اپنے ملک پر جان نچھاور کرنے کا جذبہ لیے ہزاروں فوجی جب سیاچن پر جاتے ہیں تو وہاں ان کا مقابلہ دشمن کی گولیوں کے بجائے قدرت سے ہوتا ہے۔


اپنا تبصرہ بھیجیں